احد چیمہ کی گرفتاری کے بعد سینئر سرکاری افسران نے بھی پنجاب حکومت کو بڑا جھٹکا دیدیا،مختلف منصوبوں میں کرپشن میںملوث افسران فرار، معاملہ مزید سنگین ہو گیا

پاکستان ایڈمنسٹر یٹوسروس (ایس اے ایس ) کے سینئر افسران کی طرف سے احد چیمہ کی کرپشن میں دفاع سے معذرت کے بعد پنجاب میں مکمل ہونے والے میگا انرجی و دیگر ترقیاتی منصوبوں میں مبینہ کرپشن میں ملوث افسران روپوش ہوگئے۔ پی اے ایس ایسوسی ایشن کے سنئیر افسران کو کسی افسر کا دفاع کرنا یا مدد کرنا اور اس کے حق میں احتجاج

 

کرنے کی مخالفت کر دی جس پر چیف سیکرٹری پنجاب سمیت احد چیمہ ایشو پر پنجاب کے متحرک بیور کریٹس کی بے چینی میں اضافہ ہو گیا پنجاب میں انرجی پروجیکٹس سپر ویژن کے زمہ دار افسر جہانزیب خان پہلے سے ہی بیرون ملک جا چکے ہیں۔ سینئر افسران کی عدم دلچسپی کی وجہ سے پی اے ایس ایسوسی ایشن کی نئی ایگزیکٹوباڈی کا گزشتہ روز ہونے والے انتخاب میں ملتوی کردیا گیا احد چیمہ کی گرفتاری کے بعد پی اے ایس افسران نے چیف سیکرٹری کی یدایت پر نیب پر دبائو بڑھانے کیلئے چند سرکاری دفاتر کی تالابندی کی جس کا مقصد نیب کو میٹرونس توانائی و دیگر ترقیاتی پراجیکٹس مکمل کرنے والے بیورکریٹس کو روکنا تھا کیونکہ راولپنڈی اسلام آباد میٹروبس ملتان میٹرو بس رنگ روڈ حویلی بہادر شاہ پاور پلانٹ نندی پاور پلانٹ اورنج لائن ٹرین قائداعظم سولر اور فیصل آباد انڈسٹریل اسٹیٹ کے خلاف نیب میں انکوائریاں چل رہی تھی اور ان میں مبینہ کرپشن میں آٹھ سے نو افسران ملوث ہیں پی اے ایس ایسوسی ایشن کے ایک عہدیدار نے نام نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہم ایسوسی ایشن کا غلط استعمال ہونے دیں گئے اور نہ احد چیمہ کے دفاع کیلئے احتجاج کریں گئے ایسوسی ایشن کا اجلاس اس لیے بلوایا تھا کہ کیونکہ طریقہ کار پر اختلاف تھا لیکن احد چیمہ کے خلاف نیب کے پاس ٹھوس ثبوت ہیں ااور ایسے اپنی کرپشن کا خمیازہ بھگتنا ہو گا ایسوایشن کے پلانٹ فارم سے نیب کو چند کرپٹ افسران بلیک میل کرنا چاہتے تھے لیکن ہم یہ نہیں ہونے دیں گئے پی اے ایس کی طرف سے غیر قانونی حمایت سے دستبرداری کے بعد دونوں سیکرٹریز زیر زمین چلے گئے احتجاج کو اس وقت ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب عمر رسول لیڈ کر رہے ہیں یہ وہی افسر ہیں جن کے خلاف 1102میں بطور ڈی جی ایل ڈی اے 2 ارب کی مبینہ کرپشن پر وزیر اعلیٰ ٹیم انکوائری کر چکی ہیں تاہم اس کا آج تک فیصلہ نہیں ہو سکا انہوں نے خلاف قوائد سول ورک تعمیرات اور بیوٹیفیکشن کے 36 ٹھکے دیں تھے جن میں مین بلیو وار ڈگلشن راوی جوہر ٹائون سڑک کی کارپیٹنگ ایل ڈی اے میں بائیومیٹریک سسٹم کی تنصیب ون ونڈوجوہر ٹائون ماڈل قبرستان اور پارک اینڈ رائیڈ پلازہ لبرٹی شامل ہیں۔


اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
Copyright © 2017 NewsSite